Tag filbadeeh-ghazal

نہ جانے اب ہے کہاں میرا یار ساون میں : موج غزل ادبی فورم کے ۲۶ویں آنلاین عالمی طرحی مشاعرے بعنوان ساون بتاریخ ۲۲ جولائی ۲۰۱۷ کے لئے میری طبع آزمائی : احمد علی برقی اعظمی

نہ جانے اب ہے کہاں میرا یار ساون میں : موج غزل ادبی فورم کے ۲۶ویں آنلاین عالمی طرحی مشاعرے بعنوان ساون بتاریخ ۲۲ جولائی ۲۰۱۷ کے لئے میری طبع آزمائی احمد علی برقی اعظمی نہ جانے اب ہے کہاں…

جو عمر میں ہوں بزرگ تم سے تم اُن کو جُھک کر سلام کرنا : احمد علی برقی اعظمی

بزمِ سخنوراں کے ۷۱ ویں عالمی آنلاین فی البدیہہ طرحی مشاعرے بتاریخ ۱۱ جون ۲۰۱۷ کے لئے میری کاوشاحمد علی برقی اعظمیجو عمر میں ہوں بزرگ تم سے تم اُن کو جُھک کر سلام کرنا’’ ہو نرم و نازک تمہارا…

دیا ادبی فورم کے ۱۹۷ ویں عالمی آن لاین فی البدیہہ طرحی مشاعرے بتاریخ ۲ جون ۲۰۱۷ کے لئے میری طبع آزمائی احمد علی برقی اعظمی

دیا ادبی فورم کے ۱۹۷ ویں عالمی آن لاین فی البدیہہ طرحی مشاعرے بتاریخ ۲ جون ۲۰۱۷ کے لئے میری طبع آزمائیاحمد علی برقی اعظمیوہ ہوتے میری جگہ تو جَلا بُھنا کرتےجو سنتے سوزِ دروں میرا سر دُھنا کرتےسناتے رہتے…

دل سے بے ساختہ جو شعر نکل جاتا ہے : احمد علی برقی اعظمی

 اکتیسویں  عالمی عبدالستار مفتی میموریل آن لائن فی البدیہہ مشاعرے لے لئے میری طبع آزمائیاحمد علی برقی اعظمیدل سے بے ساختہ جو شعر نکل جاتا ہے’’ شعر کیا لفظ کا مفہوم بدل جاتا ہے‘‘ اسے کہتے ہیں سبھی اہلِ جہاں…

انحراف ادبی فورم کے زیر اہتمام افتخار عارف کے مصرعہ طرح پر کورونا وائرس کی تباہ کاریوں کے تناظر میں ایک فی البدیہہ طرحی غزل احمد علی برقی اعظمی

انحراف ادبی فورم کے زیر اہتمام افتخار عارف کے مصرعہ طرح پر کورونا وائرس کی تباہ کاریوں کے تناظر میں ایک فی البدیہہ طرحی غزلاحمد علی برقی اعظمیجو اپنا فرض ہے وہ بھی ادا کئے جائیںتمام خلق خدا کا بھلا…

اک نقش جاوداں ہے محبت کی زندگی : احمد علی برقی اعظمی بشکریہ سائبان ادبی گروپ

غزل اک نقش جاوداں ہے محبت کی زندگی سوہان روح ہے مجھے نفرت کی زندگی ننگِ وجود دونوں جہاں میں ہے ان کی ذات جو جی رہے ہیں بغض و عداوت کی زندگی کردار کر رہے ہیں مرا مسخ جو…

حفیظ الرحمان احسن کے مصرعہ طرح پر انحراف کے ان لائن فی البدیہہ طرحی مشاعرہ نمبر 439 مورخہ 28 فروری 2020 پر میری طبع آزمائی احمد علی برقی اعظمی

انحراف کے ان لائن فی البدیہہ طرحی مشاعرہ نمبر 439 مورخہ 28 فروری   2020  پر میری طبع آزمائی احمد علی برقی اعظمی صبر آزما بہت ہیں یہ دن انتظار کے مثلِ خزاں ہیں جھونکے نسیمِ بہار کے وہ ماجرے خیالی…