عارف اعظمی کے شعری مجموعے ’’ جمالِ سخن ‘‘ پر منظوم تاثرات احمد علی برقی اعظمی

عارف اعظمی کے شعری مجموعے ’’ جمالِ سخن ‘‘ پر منظوم تاثرات
احمد علی برقی اعظمی
میرے پیشِ نظرہے جمالِ سخن
روح عرضِ ہُنر ہے جمالِ سخن
جس سے عارف کا حسنِ بیاں ہے عیاں
مثلِ لعل و گُہر ہے جمالِ سخن
ندرتِ فکر کا اک مرقع ہے یہ
مرجعِ دیدہ ور ہے جمالِ سخن
ہر غزل میں تغزل کی ہے چاشنی
اس طرح جلوہ گر ہے جمال سخن
حسنِ فطرت نمایاں ہے ہر شعر سے
جلوۂ معتبر ہے جمالِ سخن
آسمانِ ادب پر ہے جو ضوفگن
نور شمس و قمر ہے جمال سخن
ساتھ جس کے ملے ایک ذہنی سکوں
ایسا اک ہمسفر ہے جمال سخن

Leave a Reply