آخر اس شوخ کے ترکش میں کوئی تیر بھی تھا ۔ طرحی غزل نذرِ مرزا غالب : احمد علی برقی اعظمی

Leave a Reply